Home پاکستان ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیا

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیا

ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیا نے پبلک سیفٹی ایکٹ کو فوراً ختم کرنے کا مطالبہ کردیا فوٹوفائل

ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیا نے پبلک سیفٹی ایکٹ کو فوراً ختم کرنے کا مطالبہ کردیا فوٹوفائل

سرینگر: ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی جبر و استبداد اور ظلم  کا مکروہ چہرہ بے نقاب کرتے ہوئے بھارتی سرکار کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اورزبردستی جیلوں میں رکھنے کی مجرم قرار دیدیا۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی پر’’بےلگام قانون کا ظلم‘‘ کے عنوان سے رپورٹ جاری کی ہے جس میں جموں کشمیر پبلک سیفٹی ایکٹ کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بے نقاب کرنے کی راہ میں رکاوٹ قرار دیتے ہوئے بنیادی حقوق سے متصادم جموں و کشمیر پبلک سیفٹی ایکٹ فوری منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹ قانون کے تحت گرفتارکئے گئے 210 افراد سے متعلق ہے، رپورٹ کے مطابق قانون کی تحت 210 افراد سال کے لیے انتظامی تحویل میں لئے گئے، کالے قانون کے تحت زیر حراست افراد کو شفاف ٹرائل اور متعلقہ حقوق سے محروم رکھا گیا، جب کہ اسی کالے قانون کے تحت زیر حراست افراد ضمانت کے حق سے بھی محروم رکھے جاتے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کالے قانون کے تحت بچوں کو بھی بغیر ٹھوس شواہد کے حراست میں لیا جاسکتا ہے، زیر حراست  71 افراد عدالت سے رہائی پر نئی ایف آئی آر میں فوری حراست میں لئے گئے، زیر حراست افراد کو بیک وقت قانون فوجداری اور کالے قانون کے تحت گرفتار رکھا گیا، گرفتار کئے گئے افراد پر مجسٹریٹ کے سامنے ایک جیسے جرائم کی رپورٹس پیش کی گئیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ پولیس فوجداری قانون سے زیادہ پبلک سیفٹی قانون کا سہارا لیتی ہے، جب کہ پبلک سیفٹی قانون سے متاثرہ افراد رہائی پر نوکریوں سے محروم رہتے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں بچوں کی نظربندی، خفیہ احکامات آنا اور ریوالونگ ڈور ڈویٹینشن معمول کی بات ہے۔ ریوالونگ ڈور ڈویٹینشن کے ذریعے قیدیوں کو ضمانت سے روک دیا جاتا ہے، ریوالونگ ڈور ڈویٹینشن کے 71 واقعات میں ایک کے بعد ایک نیا حکم جاری کیا گیا، 90 فیصد واقعات میں نظربند افراد کو ایک ہی الزام میں 2،2  کیسز میں پکڑ لیا گیا۔ بھارتی فوج گرفتار افراد کو اپنے گھروں سے دور جیلوں میں ڈالتی ہے کہ گھر والے نہ مل سکیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی حکومت غیر قانونی حراستوں، اذیت رسانیوں اور تشدد کے تمام الزامات کی آزادانہ غیر جانبدارانہ تحقیق کرے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل  کے مطابق پبلک سیفٹی ایکٹ کا قانون بھارت کے انسانی حقوق قوانین سے متصادم ہے، یہ عدالتی نظام سے ماورا ہے، یہ قانون شفافیت اور انسانی حقوق کے خلاف ہے، اس قانون کے تحت کسی بھی شخص کو 2 سال تک نظربندی میں رکھنے کی اجازت ہے۔ اس قانون کی وجہ سے ریاستی انتظامیہ اور مقامی آبادی کے درمیان کشیدگی بڑھی ہے۔

 

ماضی میں بھی انسانی حقوق کے عالمی ادارے سنگین خلاف ورزیوں کی رپورٹس دے چکے ہیں، اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے مبصرین کوزمینی حقائق دیکھنے کی اجازت نہیں دی جارہی اور دنیا کی سب سے بڑی نام نہاد جمہوریت بھارت نے ان خلاف ورزیوں کو بے نقاب کرنے پر فرانسیسی صحافی کو گرفتار بھی کیا۔

نارووال میں وین اور کوچ میں خوفناک تصادم سے 5 افراد جاں بحق، 18 زخمی

ورلڈ کپ میں آج پاکستان بھارت سے ٹکرائے گا، شاہین جیت کیلئے پرعزم

تحریک انصاف کے اہم رہنما اورڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے بیٹے کی سر کاری گاڑی پر بیٹھ کر کلاشنکوف کے ہمراہ تصویر وائر ل،پارٹی ترجمان نے غلطی تسلیم کرلی، حیرت انگیز اعلان

امریکی فوج نے اسامہ بن لادن کو کیوں قتل کیا؟باقاعدہ تدفین کے بجائے لاش سمندر برد کیوں کی گئی؟،سعودی عرب کے سابق انٹیلی جنس سربراہ شہزادہ ترکی الفیصل نے سب بتادیا،سنسنی خیز انکشافات

بھارت میں قیامت خیز گرمی کا ذمہ داربھی پاکستان کو قرار دے دیاگیا، پاکستان کس طرح ”گرمی بھارت بھیج رہاہے؟“ بھارتی میڈیا کے مضحکہ خیز دعوے

ڈیڑھ برس سے ناقابل استعمال قرار دے کر گراؤنڈ کئے گئے بوئنگ777طیارہ دوبارہ آپریشن میں شامل،متعدد نئی پروازیں شروع کرنے کافیصلہ،پی آئی اے نے بڑی خوشخبری سنادی